تازہ ترین
سی آر آئی تبصرے کی مسلسل تیسرے روزسی سی ٹی وی نیوز کی نشریات میں گونج

سی آر آئی تبصرے کی مسلسل تیسرے روزسی سی ٹی وی نیوز کی نشریات میں گونج

ستائیس جولائی کو چائنا میڈیا گروپ کے سی سی ٹی وی نیوز کی نشریات میں چائنا ریڈیو انٹرنیشنل کا تبصرہ “امریکہ کو انسانی حقوق کی آڑ میں اپنی منافقت کا علاج کرنا چاہیئے” نشر کیا گیا اس طرح مسلسل تیسرے دن سی سی ٹی وی نیوز کا پروگرام اور سی آر آئی کا تبصرہ انٹرنیٹ پر تلاش کے ٹرینڈنگ ٹاپک میں شامل ہو رہا ہے۔

“امریکہ کو انسانی حقوق کی آڑ میں اپنی منافقت کا علاج کرنا چاہیئے” کے عنوان سے سی آر آئی کے تبصرہ میں نشاندہی کی گئی ہے کہ ایک طویل عرصے سے، “انسانی حقوق” دوسرے ممالک کے داخلی امور میں امریکہ کی مداخلت کا بہانہ رہا ہے- جب امریکہ کسی کو پسند نہیں کرتا تو فوراً ایک نام نہاد “خاص ملک میں انسانی حقوق کی رپورٹ” تیار کر لیتا ہے اور اپنی مرضی کے مطابق دوسرے ممالک پر انسانی حقوق کی صورت حال کی ابتری کا الزام لگا تاہے۔ تاہم دوسری طرف امریکہ میں نسلی امتیاز صدیوں سے موجود ہے۔ تبصرے کے آخر میں خیال ظاہر کیا گیا ہےکہ اپنے ملک میں بڑھتی ہوئی نسلی امتیاز، امیراورغریب کے درمیان فرق، جنسی امتیازی سلوک اور بگڑتی ہوئی سیکیورٹی کے حالات کے پیش نظر امریکہ کو سب سے پہلے “انسانی حقوق” کی آڑ میں اپنی منا فقت کا علاج کرنا چاہئے-
چھبیس جولائی کو سی آر آئی کا تبصرہ “امریکہ عالمی تعاون اور ترقی کی راہ میں رکاوٹیں ڈال رہا ہے” سی سی ٹی وی نیوز براڈکاسٹ میں نشر ہوا۔ تبصرے میں نشاندہی کی گئی ہے کہ حال ہی میں سو سے زائد امریکی افراد کے لکھے ہوئے خط میں کہا گیا ہے کہ چین اقتصادی مفادات کے ذریعے دنیا بھر میں اپنے اثرورسوخ کے دائرے کو بڑھانے کی کوشش کررہا ہے۔ یہ بات ساری دنیا پر چین کی ترقی کے مثبت اثرات کو بد نام کرنے کی کوشش ہے۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ کچھ امریکی افراد چین کی بطور اقتصادی طاقت مضبوطی سے نفرت کرتے ہیں۔
اس سے قبل پچیس جولائی کو سی آر آئی کا تبصرہ “کون دنیا بھر میں دوسرے ممالک کو دھمکارہاہے؟ “بھی سی سی ٹی وی نیوز براڈکاسٹ میں نشر ہوا۔تبصرے میں کہا گیا ہے کہ حال ہی میں ایک سو سے زائد امریکی شہریوں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو ایک خط لکھا۔اس خط میں چین پر توسیع پسندی اور اپنی جامع قومی طاقت کے ذریعے دوسر ے ممالک کو دھمکانے کا الزام لگایا گیا۔ یہ بات حقیقت سےبالکل مطابقت نہیں رکھتی۔ انہوں نے خط میں لکھا کہ امریکہ کے سیاسی نظام میں سیاست معمول کی بات اور جنگ ایک استثناء ہے۔ تاہم چین اس کے بالکل برعکس ہے۔ یہ نظریہ بالکل جھوٹا ہے۔حالیہ چند برسوں میں امریکہ نے انسداد دہشت گردی کے بہانے افغانستان اور عراق میں جنگ چھیڑی اور شام پر حملہ کیا۔ جس کے نتیجے میں متعدد عام شہری زخمی اور جان بحق ہوئے۔ موجودہ امریکی حکومت یک طرفہ پسندی پر قائم ہے۔ امریکہ عالمی امن کو نقصان پہنچارہا ہے اور عالمی بحران کی بنیادی وجہ ہے۔ انٹرنیٹ صارفین نے سی سی ٹی وی پروگرام دیکھ کر مذکورہ تبصروں کو بڑا سراہا اور ان کو معلومات سے بھرپور قرار دیا۔

یہ خبر پڑھیئے

نوجوان ماحولیاتی تبدیلی سے متعلق پالیسی پر عمل درآمد یقینی بنائیں، ائیرکوموڈور ریٹائرڈ خالد بنوری

سٹریٹیجک پلان ڈویژن کے محکمہ برائے تخفیف اسلحہ کے سابق ڈائریکٹر جنرل ائیر کوموڈور ریٹائرڈ …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons