تازہ ترین
مثبت ملکی تشخص کیلئے صنعتکاروں کو ’’برانڈ پاکستان‘‘ متعارف کرانا چاہیئے، صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی

مثبت ملکی تشخص کیلئے صنعتکاروں کو ’’برانڈ پاکستان‘‘ متعارف کرانا چاہیئے، صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے تاجروں اور صنعت کاروں کو انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں سرمایہ کاری کرنے کی تلقین کرتے ہوئے کہا ہے کہ جدید دنیا میں صنعت و تجارت کے ساتھ آئی ٹی کے شعبہ کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔

مثبت ملکی تشخص کیلئے صنعتکاروں کو ’’برانڈ پاکستان‘‘متعارف کرانا چاہئے، حکومت کی معیشت کو دستاویزی شکل دینے کی کوششوں میں تعاون کیا جائے، افغانستان میں پائیدار امن سے پورے خطے کو معاشی فوائد حاصل ہوں گے، نجی شعبہ خواتین اور خصوصی افراد کی کاروبار اور روزگار کے حوالے سے حوصلہ افزائی کے لئے اپنا کردار ادا کرے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو یہاں ایوان صدر میں وفاق ہائے پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے زیر اہتمام 44 ویں ایف پی سی سی آئی ایکسپورٹ ایوارڈز کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تقریب سے صدر وفاق ہائے پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری میاں ناصر حیات مگو نے بھی خطاب کیا۔

صدر مملکت نے تاجروں اور صنعت کاروں پر زور دیا کہ وہ ان شعبوں میں جدید رجحانات کو اپنانے کے لیے انفارمیشن ٹیکنالوجی پر توجہ مرکوز کریں، یہ شعبہ دنیا میں بڑی تیزی سے ترقی کر رہا ہے، اسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔

انہوں نے کہا کہ تجارت اور صنعت کے ساتھ انفارمیشن ٹیکنالوجی کو بھی چیمبرز کا حصہ بنایا جانا چاہیے اور اس شعبے میں سرمایہ کاری کی جانی چاہئے، اس کا ہر لحاظ سے فائدہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا کام تجارت اور سرمایہ کاری کے لئے سازگار ماحول اور سہولیات فراہم کرنا ہے جبکہ کاروبار نجی شعبے کا کام ہے۔

صدر مملکت نے تاجروں اور صنعت کاروں پر زور دیا کہ وہ حکومت کی معیشت کو دستاویزی شکل دینے کی کوششوں میں تعاون کریں، اس کے نتیجے میں ٹیکس کی رقم کے درست تصرف کے حوالے سے جاری کوششوں میں مدد ملے گی، معیشت کو دستاویزی شکل دینے پر اعتراض نہیں ہونا چاہئے۔

صدر مملکت نے کورونا کی وبا کے دوران معاشرے کے پسماندہ طبقات کے سماجی تحفظ کی کوششوں میں تاجروں اور صنعت کاروں سمیت پوری قوم کی فراخدلی کو سراہا اور کہا کہ غریب لوگوں کے لئے حکومت کا احساس پروگرام بہت بڑی کاوش ہے۔ انہوں نے کہا کہ مثبت ملکی تشخص کیلئے صنعتکاروں کو ’’برینڈ پاکستان‘‘متعارف کرانا چاہیئے، اس کے لئے اعتماد اور معیار کی بڑی اہمیت ہے۔

صدر مملکت نے کہا کہ افغانستان میں پائیدار امن سے پورے خطے کو معاشی فوائد حاصل ہوں گے، وہاں تعمیر و ترقی کا عمل شروع ہونے سے پڑوسی ملک کی حیثیت سے پاکستان کے تاجروں اور صنعت کاروں کے لئے بڑے مواقع پیدا ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ وسطی ایشیاء کے ممالک تجارت کے لئے پاکستان کے راستے سمندر تک رسائی کے خواہشمند ہیں، افغانستان میں امن و استحکام سے خطے کے لئے وسیع امکانات پیدا ہوں گے۔

صدر عارف علوی نے خواتین اور خصوصی افراد کی کاروبار اور روزگار کے حوالے سے حوصلہ افزائی کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ حکومت نے آسان قرضوں کی صورت میں وسائل کی دستیابی کا انتظام کیا ہے تاہم اس سلسلے میں ان کی مناسب رہنمائی اور ہنرمندی پر توجہ دینے کی ضرورت ہے، اس حوالے سے چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری اپنا کردار ادا کریں۔

قبل ازیں صدر وفاق ہائے پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری میاں ناصر حیات مگو نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ برآمدات پاکستان کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہیں۔

تجارتی خسارے پر قابو پانے کیلئے برآمدات میں اضافہ ناگزیر ہے۔ اس موقع پر صدر مملکت نے برآمدات کے شعبہ میں نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے برآمد کنندگان میں ایوارڈز تقسیم کئے۔

یہ خبر پڑھیئے

تھائی لینڈ کے نائب وزیر اعظم اور وزیر صحت آنوتین چرنویراکل کا سی ایم جی کوانٹرویو

تھائی لینڈ کے نائب وزیر اعظم اور وزیر صحت  آنوتین چرنویراکل  نے چائنا میڈیا گروپ کو …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons