چینی ریڈ کراس سوسائٹی کی جانب سے انجمنِ ہلالِ احمر پاکستان کو 3 لاکھ امریکی ڈالر کی ہنگامی امداد کی فراہمی

چینی ریڈ کراس سوسائٹی کی جانب سے انجمنِ ہلالِ احمر پاکستان کو 3 لاکھ امریکی ڈالر کی ہنگامی امداد کی فراہمی

پاکستان میں تعینات چین کے سفیر نونگ رونگ کا کہنا ہے کہ پاکستان اس وقت شدید سیلاب کی تباہ کاریوں کا سامنا کر رہا ہے، جس میں بہت زیادہ جانی اور مالی نقصان ہوا۔

کراچی میں چین کی جانب انسانی بنیادوں پر ہنگامی امداد کے تحت 3 ہزار خیموں کی پہلی کھیپ کی حوالگی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے نونگ رونگ نے کہا وہ ان لوگوں کے دکھ میں شریک ہیں جو ابھی تک مشکلات اور پریشانیوں میں گرفتار ہیں۔ چینی سفیر کا کہنا تھا کہ چینی حکومت نے نہ صرف سیلاب سے متاثر ہونے والے لوگوں کے لیے تشویش اور ہمدردی کا اظہار کیا بلکہ 100 ملین RMB مالیت کا امدادی سامان بھی بھیجنے کا فیصلہ کیا، جس میں 25 ہزار خیمے اور دیگر امدادی سامان شامل ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز چینی صدر شی چن پھنگ نے پاکستانی صدر ڈاکٹر عارف علوی کو سیلاب کی تباہ کاریوں پر اپنا ہمدردی کا پیغام بھیجا اور اس بات کا اظہار کیا کہ چین اور پاکستان ہمہ موسمی تزویراتی شراکت دار ہیں جو باہمی تعاون کی ایک طویل روایت کے امین ہیں لہذا چین مشکل کی ا س گھڑی میں اپنے بھائیوں کی مدد جاری رکھے گا۔

چینی سفیر نے کہا کہ اسی روز چینی وزیر اعظم لی کھی چھیانگ نے بھی وزیر اعظم شہباز شریف کو ہمدردی کا پیغام بھیجا ۔چینی سفیر کا کہنا تھا کہ کراچی کے جناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر تین ہزار خیموں کی پہلی کھیپ کی آمد دونوں آہنی بھائیوں کی دیرینہ دوستی کی عکاس ہے۔نونگ رونگ کا کہنا تھا کہ حکومت چین کی جانب سے اعلان کردہ باقی امداد بھی جلد از جلد پاکستان کے حوالے کی جائے گی ۔


نونگ رونگ نے کہا کہ چینی حکومت کے عطیہ کے علاوہ ریڈ کراس سوسائٹی آف چائنا نے پاکستان ریڈ کریسنٹ سوسائٹی کو 3 لاکھ امریکی ڈالر کی ہنگامی نقد امداد کا اعلان کیاہے جبکہ APCEA نے وزیراعظم فلڈ ریلیف فنڈ میں 15 ملین روپے کا عطیہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کچھ چینی ادارے اب بھی مقامی کمیونٹی کو مزید امدادی سامان اور نقد عطیہ فراہم کرنے پر کام کر رہے ہیں، اور چینی حکومت نے بھی پاکستان کی آفات کے بعد کی تعمیر نو میں مدد کرنے اور آفات کی روک تھام اور تخفیف میں دو طرفہ تعاون کو فروغ دینے کا وعدہ کیا ہے۔


ان کا کہنا تھا کہ چین اور پاکستان سچے دوست اور اچھے بھائی ہیں۔ ہمارے پاس ایک دوسرے کی مدد کرنے اور بڑی قدرتی آفات سے مشترکہ طور پر نمٹنے کی عمدہ روایت ہے۔ انہوں نے صدر شی چن پھنگ کے اس قول کا حوالہ بھی دیا کہ جب بھائی اکٹھے ہوتے ہیں تو سب کچھ حاصل کر سکتے ۔ چینی سفیر کا کہنا تھا کہ وہ پختہ یقین رکھتے ہی کہ پاکستانی حکومت اور عوام کی مشترکہ کوششوں سے پاکستان یقینی طور پر سیلاب کی تباہ کاریوں پر قابو پانے اور جلد از جلد اس سے نکلنے میں کامیاب ہو جائے گا۔

اس موقع پر وزیر برائے توانائی خرم دستگیر خان نے چینی قیادت اور عوام کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ یہ امداد دونوں ممالک کی آہنی دوستی کی تازہ مثال ہے۔ انہوں نے کہا کہ چین ان اولین ممالک میں شامل ہے جس نے حالیہ سیلاب میں پاکستان کی مدد کی ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ  چاہے سن دو ہزار پانچ کا زلزلہ ہو، دو ہزار دس کا سیلاب ہو یا دو ہزار بائیس کا حالیہ سیلاب چین  نے ہمیشہ پاکستان کی دل کھول کر مدد کی ہے۔ انہوں  نے کہا کہ چین نے ہمیشہ مشکل کی گھڑی میں پاکستان کی بروقت اور بھرپور مدد کی ہے جو کہ اس بات کا ثبوت ہے کہ دونوں ملکوں کے تعلقات کی جڑیں بہت مضبوط ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

شو: ٹرینڈ سیٹر

شو: ٹرینڈ سیٹر

Show Buttons
Hide Buttons