تازہ ترین
چین اور فن لینڈ کا کاربن کا اخراج کم کرنے کیلئے توانائی کا پہلا مشترکہ منصوبہ

چین اور فن لینڈ کا کاربن کا اخراج کم کرنے کیلئے توانائی کا پہلا مشترکہ منصوبہ

چین میں کوانگ چَو نانشا جامع مائیکرو انرجی نمائشی منصوبے کا باقاعدہ آغاز کردیا گیا ہے۔ فن لینڈ کی وزارت برائے اقتصادی امور اور روزگار اور چین کی قومی انتظامیہ برائے توانائی کے درمیان دستخط شدہ مفاہمت کی یادداشت کی بنیاد پر یہ توانائی کا پہلا نمائشی منصوبہ ہے۔

کوانگ تونگ پاور گرڈ کمپنی لمیٹڈ سے منسلک کوانگ چَو پاور سپلائی بیورو کے پروجیکٹ مینیجر لی تھاؤ کے مطابق اس منصوبے میں مختلف معروف ٹیکنالوجیز استعمال کی گئی ہیں، جن سے صاف توانائی کی پیداوار اور اس کا زیادہ مؤثر استعمال یقینی بنایا جارہا ہے۔ چین کے پہلے بیڈروک تھرمل انرجی سٹوریج میں انگریزی حرف U کی شکل کے 170 پائپ نصب کئے گئے ہیں، جو ضرورت سے زیادہ گرمی کو زیر زمین ذخیرہ کرنے کی اہلیت رکھتے ہیں۔ اس توانائی کو موسم سرما کے دوران استعمال کیا جاسکے گا۔

انہوں نے چینی خبر رساں ادارے سی جی ٹی این کو بتایا کہ اس منصوبے کا 60 کلو واٹ سالڈ آکسائیڈ فیول سیل اعلی کارکردگی کے ساتھ گرمی اور بجلی دونوں پیدا کر سکتا ہے۔ اسکے علاوہ یہ منصوبہ مختلف قسم کے ایندھن جیسا کہ قدرتی گیس، بائیو گیس اور ہائیڈروجن سے بھی کام کر سکتا ہے۔ منصوبے میں نصب شمسی توانائی سے تعلق رکھنے والی پلیٹوں کی کارکردگی اسی نوعیت کے دیگر آلات کے مقابلے میں بہت زیادہ ہے۔ لی تھاؤ نے مزید کہا کہ منصوبے کے تحت گرمی پیدا کرنے کی کارکردگی 52 فیصد تک پہنچ چکی ہے۔

فن لینڈ کی وزارت برائے اقتصادی امور اور روزگار کے ماتحت سرکاری ادارے بزنس فن لینڈ کے سینئر مشیر الیکس لیو کا کہنا ہے کہ منصوبے کی آزمائش کا بنیادی مقصد کاربن کا اخراج کم کرنے میں مدد کیلئے قابل تقلید تکنیکی حل کا ماڈل تیار کرنا ہے۔ یہ منصوبہ صاف توانائی کے مؤثر استعمال پر مبنی ہے اور بیک وقت گرمی اور بجلی دونوں پیدا کر سکتا ہے، جس سے توانائی پیدا کرنے کی صلاحیت روایتی طریقوں کے مقابلے میں نمایاں طور پر بہتر ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ اس منصوبے میں استعمال ہونیوالی ٹیکنالوجی کو کوانگ چو شہر میں موجود درمیانے درجے کے صنعتی پارکس کیلئے 20 فیصد تک بڑھانے کی صورت میں کاربن کے سالانہ اخراج میں 40 ہزار ٹن تک کمی لائی جاسکتی ہے۔ فن لینڈ اور چین کے درمیان دستخط شدہ مفاہمت کی یادداشت توانائی کے شعبے میں طویل المدتی تعاون کی راہیں متعین کرے گا۔ بیجنگ میں قائم فن لینڈ کے سفارت خانے کے کمرشل قونصلر مارکو تیس ماکی کا کہنا ہے کہ فن لینڈ اقتصادی فوائد اور ماحولیات کے تحفظ کی ذمہ داری دونوں کی وجہ سے چین کے ساتھ کام کرنے کیلئے تیار ہے۔

انہوں نے بتایا کہ اس امر کو یقینی بنایا جائے گا کہ فن لینڈ کی کمپنیاں چین کی بڑھتی ہوئی مارکیٹ سے بھرپور فوائد حاصل کریں، جو کاروبار کی بنیادی وجہ ہوتی ہے۔ مارکو تیس ماکی کے مطابق اس امر کو یقینی بنانے کیلئے حقیقی آمادگی بھی ضروری ہے کہ دونوں ممالک مشترکہ طور پر موسمیاتی تبدیلی سے نبرد آزما ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موسمیاتی تبدیلی ایک اہم عالمی رجحان ہے، اس سے عالمی سطح پر نمٹنا ضروری ہے۔

رواں سال کے آغاز میں دونوں ممالک کے درمیان مفاہمت کی یادداشت کے تحت نمائشی منصوبوں کے دوسرے مرحلے کیلئے امیدواروں کی فہرست کا اعلان چین کی قومی انتظامیہ برائے توانائی کی جانب سے کیا گیا تھا۔

یہ خبر پڑھیئے

تھائی لینڈ کے نائب وزیر اعظم اور وزیر صحت آنوتین چرنویراکل کا سی ایم جی کوانٹرویو

تھائی لینڈ کے نائب وزیر اعظم اور وزیر صحت  آنوتین چرنویراکل  نے چائنا میڈیا گروپ کو …

Show Buttons
Hide Buttons