پاکستان اور چین کے درمیان خطرات کے باوجود سی پیک میں سیکورٹی اورانٹیلی جنس شیئرنگ میں اضافہ ہوا ہے، وزیر دفاع خواجہ محمد آصف

پاکستان اور چین کے درمیان خطرات کے باوجود سی پیک میں سیکورٹی اورانٹیلی جنس شیئرنگ میں اضافہ ہوا ہے، وزیر دفاع خواجہ محمد آصف

وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے پاک چین دوطرفہ میکنزم، اسٹریٹجک ڈائیلاگ اور انسداد دہشت گردی سے متعلق مشاورت کو سراہتے ہوئے کہا ہےکہ دونوں ہمسایہ ممالک کے درمیان اسٹریٹجک تعلقات باہمی اعتماد پر مبنی ہیں۔وہ منگل کو یہاں چینی وفد سے گفتگو کررہے تھے۔

وزیر دفاع نے معزز مہمان کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ چین کے ساتھ دوستی پاکستان کی خارجہ پالیسی کا سنگ بنیاد ہے جس کی بنیاد علاقائی اور عالمی مسائل پر ہم آہنگی پر مبنی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان علاقائی اور عالمی فورمز پر دہشت گردی کے خلاف جنگ میں چین کی سفارتی حمایت کو سراہتا ہے۔

خواجہ محمد آصف نے کہا کہ پاک چین سیکیورٹی تعاون علاقائی استحکام کا ستون ہے، خطرات کے باوجودسی پیک میں سیکورٹی اورانٹیلی جنس شیئرنگ میں اضافہ ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ جنوبی ایشیا میں امن و استحکام برقرار رکھنے کے لیے دفاعی شعبے میں پاک چین تعاون ناگزیر ہے۔

وفاقی وزیر نے بتایا کہ پاک بحریہ نے گوادر بندرگاہ اور پاکستان کے ساحل کے ساتھ سی پیک کے تمام منصوبوں کی میری ٹائم سیکیورٹی کو یقینی بنانے کو اولین ترجیح دی ہے۔اس لیے دونوں ممالک کے لیے مختلف شعبوں میں ایک دوسرے کے ساتھ مل کر کام کرنے میں بہت وسعت موجود ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

وزیر خزانہ کا پاکستان اور جاپان کے درمیان دوطرفہ اقتصادی اور تجارتی تعلقات کو مزیدمضبوط بنانے کے عزم کا اعادہ

وزیر خزانہ کا پاکستان اور جاپان کے درمیان دوطرفہ اقتصادی اور تجارتی تعلقات کو مزیدمضبوط بنانے کے عزم کا اعادہ

وفاقی وزیر خزانہ و محصولات سینیٹر محمد اسحاق ڈار نے پاکستان اور جاپان کے درمیان …

Show Buttons
Hide Buttons