پاکستان میوزیم آف نیچرل ہسٹری معلومات کا خزانہ ہے، تفصیلات جانئیے اس رپورٹ میں

پاکستان میوزیم آف نیچرل ہسٹری گارڈن ایونیو شکرپڑیاں میں واقع ہے جس کا قیام 1976 میں پاکستان سائنس فاونڈیشن، وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے زیر انتظام میں لایا گیا۔

پاکستان میوزیم آف نیچرل ہسٹری 4 مختلف شعبہ جات پر مشتمل ہے، جن میں شعبہ نباتات، شعبہ حیوانات، شعبہ ارضیات اوور شعبہ عوامی خدمت شامل ہیں۔ پہلے تین شعبہ جات کا مقصد پاکستان میں موجود پودوں، جانوروں۔ معدنیات، چٹانوں اور فاسلز کے نمونے اکٹھے کرنا ان کی پہچان اور ان پر تحقیق کرنا ہے، جبکہ چوتھا شعبہ ترتیب اور تشہیر سے متعلق ہے۔

میوزیم میں موجود ڈائنوسار تاریخ کی زندہ حقیقت بن کر آج بھی موجود ہے۔ پاکستان میوزیم آف نیچرل ہسٹری کے شعبہ ارضیات سے وابستہ امیر حمزہ نے ایف ایم 98 دوستی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ میوزیم میں پاکستان میں موجود پودوں، جانوروں۔ معدنیات، چٹانوں اور فاسلز کے نمونے نمائش کیلئے رکھے گئے ہیں۔

میوزیم کی سیر کیلئے آنے والے محمد حماس اور اقصی زاہد نے ایف ایم 98 سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس میوزیم کی بدولت اُن کی معلومات میں مزید اضافہ ہوا ہے۔

میوزیم میں جنگلات کے ساتھ جانوروں کے دلچسپ تعلق کو بھی نمایاں طور پر ظاہر کیا گیا ہے، جبکہ چیتے، مگرمچھ، وہیل، بلیووہیل سمیت دیگر کئی جانوروں کو ہنود کیا گیا ہے۔ اس تاریخی میوزیم میں پتھروں کے دور سے لے کر اب تک  انسان کے ماحول پر مرتب پڑنے والے اثرات کو بھی میوزیم کی زینت بنایا گیا ہے۔ قدرت کے خوبصورت رنگوں پر مشتمل اس میوزیم میں تاریخ کے ادوار بتاتے ہیں کہ ماحول کو بہتر رکھنے کیلئے انسان کا ماحول دوست ہونا انتہائی ضروری ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

شاہین شاہ آفریدی کل نکاح کے بندھن میں بندھ جائیں گے

شاہین شاہ آفریدی کل نکاح کے بندھن میں بندھ جائیں گے

قومی کرکٹ ٹیم کے اسٹار فاسٹ بولر شاہین شاہ آفریدی کل نکاح کے بندھن میں …

Show Buttons
Hide Buttons