بادشاہ چارلس سوم کے نئے مونوگرام کی نقاب کشائی کر دی گئی

آنجہانی ملکہ الزبتھ دوم کی وفات پر سرکاری سطح پر منائے جانے والے سوگ کے اختتام پر بادشاہ چارلس سوم کے نئے مونوگرام کی نقاب کشائی کردی گئی ہے۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق بادشاہ کے مونوگرام یا سائفر کو کالج آف آرمز کی جانب سے ڈیزائن کیا گیا ہے۔ اس ڈیزائن میں بادشاہ چارلس کے نام کے رسم الخط استمال کیے گئے ہیں یعنی ’C‘ اور ’R‘ جبکہ III کو حرف ’R‘ کے اندر لکھا گیا ہے۔ ان تمام خروف کے اوپر شاہی تاج بنایا گیا ہے۔ اس مونوگرام کو سونے سے بنایا گیا۔

شاہی انتظامیہ کے مطابق محل کا پوسٹ روم ہر سال تقریباً 2 لاکھ ڈاک ارسال کرتا ہے جس میں مختلف تقریبات کے دعوت نامے، عوام اور ریاستی اراکین کی جانب سے موصول ہونے والے خطوط اور ان کے جواب وغیرہ شامل ہیں۔ شاہی مونوگرام بنانے والا کالج آف آرمز 1484 میں قائم کیا گیا تھا جس کا مقصد سرکاری رجسٹرز بنانا اور ان کا خیال رکھنا ہے۔

نئے سائفر کا ڈیزائن کالج آف آرمز نے بنایا مگر بادشاہ چارلس سوم نے اس کی منظوری دی جبکہ اس میں بنائے گئے اسکاٹش کراؤن کی منظوری کنگ آف آرمز لارڈ لیون نے دی ہے۔اس سائفر کو سرکاری دفاتر، دستاویزات، عمارتوں اور ڈاک کے لیے کیا جائے گا۔نئے سائفر کی نقاب کشائی کے ساتھ ہی برطانیہ میں بادشاہ کی شبی والے نئے سکے بھی جاری کردیئے گئے ہیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق بتدریج ملکہ الزبتھ دوم کے مونوگرام کو بادشاہ کے مونوگرام سے تبدیل کردیا جائے گا۔

تاہم شاہی انتظامیہ کو اختیار حاصل ہے کہ وہ پچھلے بادشاہ یا ملکہ کا سائفر کئی برسوں تک استعمال کرسکتے ہیں۔میڈیا ذرائع کے مطابق برطانیہ میں بادشاہ چارلس سوم کے پوٹرئے کے ساتھ نئے کرنسی نوٹ کا اجرا 2024 کے وسط میں کیا جائے گا۔ بکنگھم پیلس کے کورٹ پوسٹ آفس اس نئے سائفر کو استعمال کرتے ہوئے اسٹامپ پوسٹ بنانے والا پہلا محکمہ بن گیا ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

لالٹین فیسٹیول کے کھانے

لالٹین فیسٹیول چین کے روایتی تہواروں میں سے ایک ہے ۔ اس تہوار کے موقع …

Show Buttons
Hide Buttons