تازہ ترین
بلوچستان میں دانش سکول اور سینٹر آف ایکسیلینس منصوبے پر عملدرآمد کے لئے ورکنگ پیپر تیار

بلوچستان میں دانش سکول اور سینٹر آف ایکسیلینس منصوبے پر عملدرآمد کے لئے ورکنگ پیپر تیار

وزیر اعظم محمد شہباز شریف کے بلوچستان میں عالمی معیار کی درسگاہوں کی تعمیر کے منصوبے میں اہم پیشرفت کرتے ہوئےبلوچستان میں دانش سکول اور سینٹرآف ایکسیلینس کے قیام کے منصوبے پر عملدرآمد کے لئے ورکنگ پیپر تیار کرلیاگیا،بلوچستان میں تعلیم کے فروغ کے اس تاریخی منصوبے کے لئے صوبائی اسمبلی باضابطہ قانون سازی کرے گی،بلوچستان میں دانش سکول اینڈ سینٹرز آف ایکسیلینس اتھارٹی قائم کی جائے گی۔

وزیر اعظم آفس کے میڈیا ونگ سے جاری بیان کے مطابق دانش سکول اور سینٹرز آف ایکسیلینس کے ذریعے غریب ترین بچوں کو جدید تعلیمی سہولیات دی جائیں گی۔عالمی معیار کے سکول، بہترین نصاب، آئی ٹی اور ٹیکنالوجی سے آراستہ لیبارٹریز بھی قائم ہوں گی ،اتھارٹی کے سربراہ وزیراعلیٰ بلوچستان ہوں گے۔ چیف سیکرٹری، تعلیم وخزانہ کے صوبائی سیکریٹری اور ایم ڈی اتھارٹی دیگر ارکان میں شامل ہوں گے۔وفاقی حکومت کے نامزد کردہ کم ازکم تین نمائندے بھی اتھارٹی کے رکن ہوں گے۔اتھارٹی صوبے بھر میں دانش سکولوں اور سینٹرز آف ایکسیلینس کے قیام کے لئے کام کرے گی ۔

اتھارٹی تعلیمی کورسز کی تیاری، وظائف کی تقسیم، امتحانات ، نجی وسرکاری اور دیگرذرائع سے فنڈز کے حصول کی ذمہ دار ہوگی۔اتھارٹی کے تحت گورننگ باڈی بنائی جائے گی جس کی مدت دو سال ہو گی۔ گورننگ باڈی پانچ یا اس سے زائد ارکان پر مشتمل ہوگی۔گورننگ باڈی دانش سکولوں اور سینٹرز آف ایکسیلینس کے انتظامی ومالی امور چلائے گی۔گورننگ باڈی کے ذریعے سکولوں کے پرنسپل اور دیگر عملہ تعینات کیاجائے گا۔گورننگ باڈی کے ارکان رضاکارانہ بنیادوں پر کام کریں گے،کوئی مالی فائدہ نہیں لیں گے۔

گورننگ باڈی شفاف انداز اور میرٹ پر داخلے یقینی بنائے گی۔20 فیصد نشستیں اُن طالب علموں کے لئے ہوں گی جو فیس اور دیگر اخراجات ادا کرسکیں۔دیگر تمام نشستوں پر داخلہ کم ازکم اجرت 25 ہزار ماہانہ سے کم آمدن والے گھرانوں کے بچوں کو دیاجائے گا۔دونوں والدین سے محروم یتیم بچے، بیوائوں کے بچے مفت تعلیم حاصل کریں گے۔ناخواندہ والدین کے بچوں کو ان سکولوں اور تعلیمی مراکز میں داخلہ دیاجائے گا۔

بچوں اور بچیوں دونوں کے لئے سکولوں میں جدید انفراسٹرکچر، فرنیچر، آئی ٹی لیب اور دیگر سہولیات مہیا کی جائیں گی۔ان سکولوں میں بہترین اساتذہ کا تقرر کیاجائے گا ، بورڈنگ کی سہولت بھی مہیا ہوگی۔بورڈنگ میں بچوں کی بہترین کردار سازی کے لئے جامع نظم تیار کیاجائے گا۔دانش سکولوں اور سینٹرز آف ایکسیلینس میں ماہر سائیکولوجسٹ اور کیرئیر کونسلنگ کی سہولیات بھی فراہم کی جائیں گی۔کیرئیر کونسلنگ کے ذریعے بچوں کے تعلیمی معیار، مثبت رجحانات اور ترقی کے جذبے کو ابھارا جائے گا۔

یہ خبر پڑھیئے

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری کی کوئٹہ میں پولیس لائن کے قریب دھماکہ کی مذمت

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری کی کوئٹہ میں پولیس لائن کے قریب دھماکہ کی مذمت

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین و وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے کوئٹہ میں پولیس لائن …

Show Buttons
Hide Buttons