سفیر کو مسجد اقصیٰ میں داخلے سے روکنے پر اردن کا اسرائیل سے احتجاج

 اردن کی وزارت خارجہ نے عمان میں اسرائیلی سفیر کو طلب کرکے اردن کے سفیر کو مسجد اقصیٰ میں داخلے سے روکنے پر سخت احتجاج کیا ہے۔

سعودی خبر رساں ادارے کے مطابق اردن کی وزارت خارجہ کے ترجمان سفیر سنان مجالی نے بتایا کہ اسرائیلی سفیر کو احتجاجی مراسلہ دیا گیا ہے جس میں تل ابیب میں تعینات اردنی سفیر کو مسجد اقصیٰ کے دورے سے روکنے پر سخت احتجاج کیا گیا ہے اور اسرائیلی سفیر کو کہا گیا کہ وہ یہ مراسلہ فوری طورپراپنی حکومت کو ارسال کرے۔

احتجاجی مراسلہ میں کہا گیا ہے کہ مقبوضہ بیت المقدس اور مسجد اقصیٰ کے امور کی تمام ذمہ داری اردن کی ہے اور اردنی اوقاف اسلامی امور اور مقدس مقامات، مسجد اقصیٰ/الحرم الشریف کے تمام امور اور اس تک رسائی کو منظم کرنے کے لیے خصوصی دائرہ اختیارکے ساتھ قانونی اتھارٹی ہے۔ احتجاجی مراسلہ میں اس بات پر بھی زور دیا گیا کہ اسرائیل ایک قابض طاقت کے طور پر مقبوضہ بیت المقدس اور اس کے مقامات مقدسہ بالخصوص مسجد اقصیٰ کے حوالے سے بین الاقوامی قانون، خاص طور پر بین الاقوامی انسانی قانون کے مطابق اپنی ذمہ داریاں پوری کرے۔

اسرائیل سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ کسی بھی ایسے اقدام سے گریز کرے جس سے مقدس مقامات کی حرمت اور اس میں موجود تاریخی اور قانونی حیثیت کو تبدیل کرنے کی راہ ہموار ہوسکتی ہو۔ واضح رہے کہ اسرائیل میں انتہا پسند عناصرپرمشتمل حکومت کے قیام کے بعد جہاں ایک طرف فلسطینیوں کے خلاف قابض فوج کی مسلح کارروائیاں تیز ہوگئی ہیں وہیں مسجد اقصیٰ کی بےحرمتی کے واقعات میں بھی اضافہ ہوا ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

چین پُر امن ترقی کی راہ پر گامزن ہے،چینی وزیر اعظم

چینی وزیر اعظم لی کھ چھیانگ  نے برطانوی تاجر برادری پر زور دیا ہے کہ …

Show Buttons
Hide Buttons